TAZEEN AKHTAR

“GEN RAHEEL SHOULD USE HIS PRESENCE TO CHANGE THE THINGS IN PAKISTAN” - IRSHAD ULLAH KHAN

By Tazeen Akhtar - Irshad Ullah Khan, needs no introduction in the notable circles of Pakistan but for our new readers it is important to mention here that he is the only student writer in the eight hundred years history of Oxford whose play “Rachel and Sapphira” was staged in the professional season of The Oxford Playhouse in 1965. He is the first Pakistani who introduced Solar Energy in Pakistan.

رینجرز کو کرپشن پکڑنے کا مینڈیٹ نہیں ملا تھا۔کراچی کے محکموں پر چھاپے ماریں گے تو زرداری کی طرف سے ردعمل آئیگا

اسلام آباد(تزئین اختر) ایک ایسے وقت میں جب بھارتی وزیراعظم اور وزراء پا کستان توڑنے کا کریڈٹ لے رہے ہوں اور پاکستان کے اندر کارروائیوں کی دھمکیاں دے رہے ہوں خود پاکستان کی بڑی سیاسی پارٹی کے سب سے بڑے لیڈر اوروہ بھی سابق صدر پاکستان یعنی سپریم کمانڈر مسلح افواج اگرجرنیلوں کے کچے چٹھے کھولنے کی وارننگ دے تو یہ سمجھنے کے لئے کہ حالات انتہائی نازک ہیں کسی سیانے کے پاس جانے ضرورت نہیں۔

اکادمی ادبیات چیئرمین کیلئے انٹرویوز میں قواعدوضوابط کی سنگین خلاف ورزیا ں

اسلام آباد(تزئین اختر)اکادمی ادبیات پاکستان کے نئے چیئرمین کیلئے ہونے والے انٹرویوزکے عمل میں قواعدوضوابط کی سنگین خلاف ورزیوں کاانکشاف ہواہے۔یہ پوسٹ گریڈ22کی ہے مگرانٹرویوکے اشتہارمیں گریڈ21کی بتائی گئی ہے۔مزیدیہ کہ 22گریڈکی پوسٹ کے لئے جن تین افسروں نے انٹرویولیاوہ تینوں گریڈ22سے کم کے افسرتھے۔یہ انٹرویوگزشتہ دنوں ہوئے۔انٹرویولینے والے پینل کے سربراہ اعظم خان تھے جوگریڈ21کے ایڈیشنل سیکرٹری اطلاعات ہیں جبکہ باقی دوگریڈ20کے افسرتھے۔یہ بھی معلوم ہواہے کہ اس پوسٹ کے لئے بالائی عمرکی حد62سال تھی مگراس سے زیادہ عمرکے امیدواروں کوبھی انٹرویومیں شامل کرلیاگیا

انسائیٹ ود سدرہ اقبال‘‘ ۔پی ٹی وی نیوز پروگرام ۔ پی ٹی آئی اورحکومت کی کشتی ختم نہ ہوئی تو کوئی تیسرا آ کر برابر چھڑوا دے گا ۔ تزئین اختر

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) پیپلز پارٹی اور مسلم لیگ ن کے رہنماؤں نے پی ٹی آئی کی طرف سے شہروں کو بند کرنے کی مذمت کی ہے اور کہا ہے کہ وہ بامقصد مذاکرات کی طرف آئیں کیونکہ دھرنوں اور شہروں کو بند کر کے وہ کوئی قومی خدمت سر انجام نہیں دے رہے ۔ دوسری طرف پی ٹی آئی کے نمائندے نے کہا کہ حکومت دھاندلی کی تحقیقات کرا دیتی تو بات یہاں تک نہ پہنچتی۔

پریس کانفرنسیں چھوڑیں،اب فیصلے کریں

8دسمبرکے کالم میں لکھاتھا کہ شہربندہوناایک بات ہے مگرخدشہ اس بات کا ہے کہ شہرمیں سوگ نہ ہوجائے اوروہی ہواجس کاڈرتھا ۔23سالہ نوجوان جسے پی ٹی آئی اپناکارکن بتارہی ہے جان سے گیااورجس شخص کی گول کاوہ نشانہ بناپہلے اسے راناثناء اللہ کاآدمی بتایاگیامگربعد ازاں راناثناء اللہ نے اس سے لاتعلقی ظاہرکردی جبکہ زعیم قادری کاکہناتھاکہ وہ کسی کالعدم تحریک کاکارکن ہے۔اس کامطلب ہے کہ حکام نے اس کی شناخت کرلی ہے جوہونی بھی چاہیے تھی کیونکہ اس کی واضح فلم میڈیا پرچل رہی تھی ۔پرویزرشید نے پریس کانفرنس میں اس شخص کی گرفتاری اورمقدمہ چلانے کایقین دلایا جبکہ وزیراعلیٰ اوروزیراعظم نے

یہ بِلاَّ کون ہے ۔اوراب بھیڑیاکون ہے؟

30نومبرکے ساتھ بھی وہی ہواجوہوناتھا۔جو14اگست کے ساتھ ہواتھا۔اوراب کپتان نے16دسمبر کی تاریخ دی ہے کہ اس روزپاکستان بندکردیں گے۔جی ہاں16دسمبر۔ وہ تاریخ جب 1971ء میں پاکستان دولخت ہواتھا۔ڈھاکہ پلٹن میدان میں پاک فوج کے جنرل نیازی عرف ٹائیگرنے جنرل اروڑہ کے سامنے ہتھیارڈالے تھے۔کیایہ اتفاق ہے کہ16دسمبر1971 ؁ء کوبھی پاکستان کو ایک نیازی درپیش تھااور16دسمبر2014کوبھی پاکستان میں ایک نیازی چھایاہوگا۔حالات بھی کچھ مختلف نہیں۔71ء میں بھی ملک سیاسی افراتفری اورایجی ٹیشن کاشکارہوکرسقوط ڈھاکہ تک پہنچاتھااوراب بھی ملک میں سیاسی تصادم اس حدتک جاپہنچاہے کہ ملک کو بندکرنے کی با

Pages

Subscribe to RSS - TAZEEN AKHTAR