پاکستان چین اور روس تعلق مسائل زدہ خطے میں استحکام کی بڑی امید

Founder Editor Tazeen Akhtar..

اسلام آباد(تزئین اختر /نمائندہ خصوصی)چیئرمین جوائنٹ چیفس آف سٹاف کمیٹی جنرل زبیر محمود حیات نے کہا ہے کہ چائنہ پاکستان روس اتحاد ایک دلچسپ اور اہم پیشرفت ہے ۔چائنہ کی اٹھان بذریعہ اقتصادی ترقی اور روس کے سفارتی تعاون نے موجودہ سخت صورتحال میں پاکستان کی پوزیشن مضبوط کی ہے۔وہ گزشتہ روز ’’پاکستان ہاؤس‘‘ کے زیر اہتمام ’’انٹرنیشنل کانفرنس چائنہ پاکستان اور روس علاقائی استحکام اور امن کے لئے فوائد ‘‘کے شرکاء سے خطاب کررہے تھے ۔

اس موقع پر چین اور روس کے سفیر بھی موجود تھے اور انہوں نے بھی خطاب کیا۔

ڈائریکٹر جنرل پاکستان ہاؤس رانا اطہر جاوید نے استقبالیہ کلمات میں کہا کہ پاکستان انڈیا کی وجہ سے علاقائی استحکام میں مسائل کا سامنا کررہا ہے۔پاکستان کو انٹرنیشنل سیکورٹی اور تعاون کے فورمز کا حصہ بننا چاہیے۔پاکستان دنیا کی دو اہم طاقتوں چین اور روس کے ساتھ اپنے تعلقات کو فروغ دیگا کیونکہ اس سے پاکستان عسکری اور اقتصادی دونوں لحاظ سے مضبوط ہوگا۔

مہمان خصوصی جنرل زبیر محمود حیات نے اپنے کلیدی خطاب میں کہا کہ پاکستان چین اور روس تعلق مسائل زدہ خطے میں استحکام کی بڑی امید ہے۔تینوں ملک ملکر افغانستان میں استحکا م ،دہشتگردی کا مقابلہ اور اقتصادی منصوبوں پر کام کرسکتے ہیں۔ان کا تعلق ترقی کے لئے صحیح مواقع فراہم کرتا ہے۔

روس کے سفیر الیگزی وائے دیدوم نے کہا کہ پاکستان اور روس کو فوجی شراکت بڑھانی چاہیے ۔چین کے حوالے سے انہو ں نے کہا کہ ایس سی او کا پلیٹ فارم چین روس اور پاکستان میں اقتصادی تعاون بڑھانے کا موقع فراہم کرتا ہے۔

چین کے سفیر یاؤجنگ نے کہا کہ چین باہمی احترا م اور خودمختاری کی بنیاد پر امن کے لئے کام کرنا چاہتا ہے اور اس کے لئے تعاون اور رابطے کا راستہ اختیار کرنے کا حامی ہے۔افغان امن عمل پر بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ چین افغان مصالحت پر کام کررہا ہے اور اس میں چین پاکستان اور افغانستان کے لئے مشترکہ چیزیں موجود ہیں۔چین روس اور پاکستان کو دیرپا تعاون کی حکمت عملی بنانی چاہیے کیونکہ علاقائی استحکام اور ترقی کے مقاصد تینوں کے مشترکہ ہیں۔

کانفرنس میں سلمان بشیر ،ڈاکٹر شبانہ فیاض،ڈاکٹر ظفر نواز جسپال،حسن جاوید ،ڈاکٹر شاہدہ وزارت،عمران غزنوی نے بھی خطاب کیا۔