Articles

جرمنی کے شہر برلن میں ” انٹر نیشنل گرین ویک “

وزیر اعلیٰ پنجا ب میاں محمد شہباز شریف کا وژن۔ فوڈ سیفٹی / بین الاقوامی معیار
 پاکستانی زرعی و لائیوسٹاک مصنوعات کی نمائش بہت بڑی کامیابی ہے : چیف ایگزیکٹو آفیسر سٹار فارم کےمسٹر ہانس پیٹر
                                    تحریر:سید شاہد حسین نقوی

عوام ہڈی نہیں گوشت کھائیں گے

 بچپن میں کہانی سنی تھی کہ بلی کے گلے میں گھنٹی کون باندھے گا؟بلی روزانہ ایک چوہے کواٹھالے جاتی اس لئے چوہے بڑے پریشان تھے۔مسئلہ یہ تھا کہ بلی کے آنے کاپتہ ہی نہ چلتا تھا اور وہ سرپرپہنچ جاتی تھی۔سارے چوہے اس مسئلے کاحل تلاش کرنے کے لئے سرجوڑکربیٹھے تو ایک سیاناچوہا دورکی کوڑی لے کرآیاکہ اگربلی کے گلے میں گھنٹی بندھی ہوتواس کے حملے کاعلم ہوجائے گا اورہم اپنے بلوں میںجاکرچھپ سکیں گے۔سارے چوہے بہت خوش ہوئے کہ چلو مسئلہ حل ہوگیا مگرتھوڑی دیربعد ہی ان کی ساری خوشی کافورہوگئی کیونکہ اب ایک اورمسئلہ درپیش تھا کہ بلی کے گلے میں گھنٹی کون باندھے گا؟

Pakistani Community in Denmark

Bashy Quraishy,Despite the fact that over the last 35 years Pakistanis in Denmark have worked hard to integrate socially and culturally into danish society, they are often met with much suspicion and mistrust - an attitude that is simply a result of prejudice and ignorance about a people and their cultural background.Pakistani's are still called " foreigners " or " paki's " even though many of them have children and grandchildren who were born in Denmark.

The conspiracy called Sadhbhavana

Mohammad Yousuf Naqash,The perpetrators of state terrorism Army and allied forces of India have inflicted  heavy damage and  loss of men and material in Kashmir. Over one lakh regardless of age and gender were done to death mercilessly. Thousands were arrested, tortured and detained. Thousands were disabled and at least ten thousand were subjected to enforced disappearance. Besides violating the chastity of our women folk, properties, chattels and business establishments worth trillions of rupees were either set on fire or blasted and ruined in ashes. Fruit orchards were uprooted.

عید میلاد النبیﷺ۔ اہمیت اور تقاضے ،ڈاکٹرعارف محمود کسانہ۔ سویڈن

دنیا کی تمام اقوام اور مذاہب کو ماننے والے اپنے، قومی دنِ، اہم ایام اور تہوارپورے جوش و خروش سے مناتے ہیں جس سے اُن کی قومی وحدت ، اپنے نظریہ سے لگن اور اُس کے ساتھ اپنی وابستگی کا بھر پور اظہارہوتا ہے۔ اس طرح کی تقریبات ایک طرح سے اُن کے ملی اور قومی جذبہ کا مظہر ہوتی ہیں۔ سورہ یونس کی آیت ۸۵ میں اہلِ ایمان کو حکم دیا گیا کہ قرآنِ حکیم جیسی عظیم نعمت جو بعثِ محمدیﷺ سے ممکن ہوئی، اس کے ملنے پر جشنِ مسرت مناﺅ۔ قرآن صاحبِ قرآن سے تو الگ ہو ہی نہیں سکتا کیونکہ آپﷺ نے اپنی تئیس سال کی زندگی میں قرآن کو عملاََ متشکل کر کے دیکھایا نیزاُم المومنین حضر

Memorandum for release of Dr. Aafia Siddiqui and other Persons

His Excellency Consulate General,nited States of America,Karachi. Dated: 10th Feb 2010,Today we are gathered here to draw your attention to some grave in justice.We are not here to create a disturbance or take the law into our hands, we are not against the people of the United States nor do we intend to denounce them.We are not here to play a circular blame game.We want to state our words directly without the duplicity of diplomatic language.

Maqbool Bhut, Hero of Kashmiri Freedom Fight

(Anniversary 11 February)Dr Sajid Khakwani(drsajidkhakwani@gmail.com)  Freedom and migration are inter relevant realities. Freedom is a pattern of all holly prophets lives, No prophet of Allah The Almighty accepted the sovereignty of other than Allah. For the sake of freedom all the prophets committed migration and of course migration is one of the pioneer activity of freedom.

تلخ معاشی حقیقتیں اور پاکستان

پاکستان اس وقت داخلی مسائل کے علاوہ ناموافق علاقائی اور اسٹریٹجک صورتحال سے بھی دوچار ہے۔ امریکہ اس خطے خصوصاً افغانستان کے حوالے سے ہمارے لئے مشکلات پیدا کر رہا ہے۔افغان مسئلے کی وجہ سے پاکستان دہشت گردی اور بدامنی کا شکار ہے۔ سرمایہ کاری رکی ہوئی ہے اور اقتصادی مشکلات بڑھ رہی ہیں۔ ان حالات میں اصلاح احوال کیلئے فوری اقدامات انتہائی ناگزیر ہو چکے ہیں۔ موجودہ حکومت کے دور میں کرپشن ٹیکس چوری اور خراب طرز حکمرانی کی وجہ سے ملک کو ساڑھے 8ہزار ارب روپے یا94ارب امریکی ڈالرز کا مالی نقصان پہنچ چکا ہے۔ یہ دعویٰ ٹرانسپرنسی انٹرنیشنل نے کیا ہے ¾ اس کا

فیصلے کی گھڑی سمیع اللہ ملک

جونہی یہ خبرفرانس کہ صدارتی محل میں پہنچی کہ افغانستان کے صوبہ کاپیسہ میں فرانسیسی فوج کے ٹریننگ سنٹرمیں ایک زیرتربیت افغان فوجی نے اندھادھندفائرنگ کرکے چارفرانسیسی فوجیوں کوہلاک اورسولہ کوشدیدزخمی کر دیاہے تووہاں سناٹاطاری ہوگیا،فوری طورپرفرانسیسی حکومت کی کابینہ کاہنگامی اجلاس طلب کرلیاگیااورفرانس کے صدرنکولیس سرکوزی نے افغانستان میں اپنے جوائنٹ آپریشن اورٹریننگ پروگرام منسوخ کرنے کااعلان کرتے ہوئے اپنی افواج کوفوری طورپرواپس بلانے پرغورشروع کردیا۔فرانس نے عندیہ دیاہے کہ ہم اگرچہ اپنے اتحادیوں کے ساتھ ہیں لیکن ہمیں اپنے اہلکاروںکی اس طرح کی ہ

Europe's own human-rights crisis

By Benjamin Ward  -  25.01.2012 Europe's treatment of minorities endangers our core values.To many friends of human rights in Europe, the Arab Spring has been the most thrilling period since the fall of the Berlin wall. Judging from their soaring rhetoric, European leaders share that enthusiasm. Europe has much to offer its friends in north Africa, the logic goes, when it comes to upholding rights for all.The reality is far less edifying. EU governments proved reluctant to help refugees and migrants fleeing Libya, including people risking their lives at sea in rickety boats.

۔۔۔ پاکستان کی شاندار فتح ۔۔۔

پطارق حسین بٹ( سابق جنرل سیکر ٹری ا بو ظبی کرکٹ کونسل)

عمران کی سونامی اور اصغر خان کی دلدل , تحریر: ذوالفقار علی بلتی

    آج کل ملک میں عمران خان کی سونامی، جنرل پرویز مشرف کے زلزلے اور جاوید ہاشمی کی بہادری کے چرچے زوروں پر ہیں مگر لوگ شاید اصغرخان کی دلدل کو بھول چکے ہیں- اصغر خان ، عمران خان اور جاوید ہاشمی میں ایک بات جو قدر مشترک ہے وہ یہ کہ تینوں اپنے آپ کو عقل کل اور اپنے ساتھیوں سے مختلف اور منفرد سمجھتے ہیں - 1960ءکی دہائی کی بات ہے جب ذوالفقار علی بھٹو نے ایوب کابینہ سے استعفی دے کر سیاسی جماعت بنانے کا فیصلہ کیا تو سب سے پہلے ائر مارشل اصغر خان سے ملنے ایبٹ آباد میں ان کے گھر گئے اور ان سے ایوب خاں کے خلاف جدوجہد میں تعاون کے لئے کہا تو انہوںنے بھٹو

ڈنمارک میں پاکستان

اگلے روز دن کو مکمل آرام تھا جبکہ رات کو پاکستانی سفیر محترمہ فوزیہ عباس نے کھانے کا اہتمام کر رکھا تھا۔ یہ کھانا انڈیا پیلس میں تھا۔ اس پر ایک ساتھی نے تبصرہ کیا کہ پاکستانی سفیر کا کھانا اور انڈیا پیلس میں۔ مگر بعد ازاں ہمیں معلوم ہو گیا کہ اب یہ ہوٹل ایک پاکستانی کی ملکیت ہے۔ فوزیہ عباس کے میاں بھی سفیر تھے۔ معلوم ہوا کہ ان کا انتقال ہو چکا ہے۔ فوزیہ تقریباً 5 سال سے کوپن ہیگن میں تعینات ہیں۔ کھانے پر انہوں نے بتایا کہ ان کی تقرری جنرل مشرف کے دور میں ہوئی تھی۔ ہم نے ان سے دریافت کیا کہ عورت بہتر سفیر ثابت ہوتی ہے یا مرد۔ ان کا کہنا تھا کہ ی

THE FRUIT THAT DID NOT FALL

Reflections by Comrade FideI

Cuba found itself forced to fight for its existence against an expansionist power located a few miles off its coast that had declared the annexation of our island and that believed our destiny was to fall into their lap like a piece of ripe fruit. We were condemned to cease to exist as a nation.

صدر سرکوزی اور افغان فوجیوں کا غم تحریر : یوسف عالمگیرین

فرانس کے صدر سرکوزی اُس وقت اپنا سر پکڑ کر بیٹھ گئے جب افغان نیشنل آرمی کے ایک فوجی جوان نے فائرنگ کرکے چار فرانسیسی فوجیوں کو ہلاک کر دیا۔ ظاہر ہے یہ خبر فرانس جیسے ملک پر کوہِ گراں بن کر گری اور صدر سرکوزی نے فوری طور پر افغانستان میں فرانسیسی فوجیوں کی سرگرمیاں معطل کرنے کا اعلان کر دیا۔ صدر سرکوزی کوپہلی مرتبہ احساس ہوا کہ جانیں لینے کی بجائے جانیں دینا زیادہ مشکل کام ہے۔

Is Imran Khan the leader Pakistan needs? by Ethan Casey on January 23rd, 2012

I’m not Pakistani, and for me to make pronouncements or pass judgment on Pakistani domestic politics would be presumptuous. But several Pakistani friends have asked me to write about Imran Khan. I do so now, albeit hesitantly, because what he represents is an important subject at this pregnant historical moment.

Pages